پی سی بی ملازمین کی ہائے!

حکومتیں آئیں، اور حکومتیں گئیں۔۔۔

کسی سے کرکٹ کے ملازمین، کھلاڑیوں اور شائقین کو اتنی اُمید نہیں تھی، جتنی خان صاحب سے۔ کھلاڑیوں کو آخر کھلاڑی سے ہی تو اُمید لگانی تھی۔۔۔ لیکن مہاجرہ ہی کچھ اور ہوا۔

ملک میں جس طرح دیگر شعبے، اس حکومت کے آنے کے بعد سے تباہ حالی کا شکار ہیں ایسا ہی حال کرکٹ کی ترجمانی کرنے والے شعبے پی سی بی کابھی ہے۔ جس کا چیر مین تو خان صاحب نے آتے ساتھ ہی کر دیا تھا لیکن اس کی بد حالی کو وہ ابھی بھی ختم نہیں کرسکے ہیں۔

آج ہی ایک معروف کرکٹ اور ملکی کھیلوں کے صحافی نے ایک  ٹویٹ میں بتایا کہ راولپنڈی میں ایک پی سی بی کے ملازم، علاج کے لیے سہولیات اور تنخواہ نہ ملنے کی وجہ سے، دم توڑ گئے۔

یہ تو صرف ایک ایسا واقع ہے، جو سامنے رپورٹ ہوا ہو، نہ جانے ایسے اور کتنے واقعات اور حادثات ایسے ہیں، جو ہماری آنکھوں اور کانوں سے دھکے چھپے ہیں۔

کئی حکومتی ادارے تو ایسے بھی ہیں، جن کے بارے میں بات کرنے کی اجازت ملازمین کے پاس نہیں ہوتی اور جو ایسا کرتے ہیں، ان کو اپنی نوکری، یا کبھی کبھی، اپنی جان سے بھی ہاتھ دھو بیٹھنا پڑتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us