استاد کی مار،بچے کے پیٹھ پر نشان چھوڑ گئی

کوئٹہ میں پرائمری اسکول کے طالب علم پر تشدد کرنے والے استاد کو تین ماہ کے لیے معطل کرکے تحقیقات کا حکم دے دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز کوئٹہ کے گورنمنٹ بوائز پرائمری اسکول پوسٹل کالونی میں عبدالقادر آزاد نامی ٹیچر نے پہلی جماعت کے طالب علم کو تشدد کا نشانہ بنایا تھا۔ جس پر بچے کے والد نے تھانہ سول لائن میں ایف آئی آر درج کروائی تھی۔ ہفتہ کو ڈائریکٹر ایجوکیشن نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے عبدالقادر آزاد کو تین ماہ کے لیے معطل کردیا اور ڈی ای او کوئٹہ کو 18 نومبر تک واقعہ کی مکمل تحقیقات کرنے کی ہدایت کردی۔

دریں اثنا مشیر تعلیم محمد خان لہڑی سول اسپتال کوئٹہ گئے۔ جہاں انہوں نے گزشتہ روز استاد کے تشدد کا نشانہ بننے والے طالب علم حکمت اللہ کی عیادت کی اور انکے والدین کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کروائی۔

سوال یہ ہے کہ کیا کم سن بچے پر بہیمانہ تشدد کرنے والے اس استاد کو تین ماہ تک معطل کردینا مسئلے کا حل ہے؟ آئے روز بچوں کے ساتھ مار پیٹ کرنے کی روک تھام کے لیے اس طرح کی آسان سزائیں کافی ہیں؟

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us