آرمی ایکٹ ترمیمی بل منظور

آرمی ایکٹ میں ترمیم کا بل یوں تو پارلیمنٹ سے منظور ہو گیا ہے۔ اور ایسا ہی ہونے کی توقع بھی کی جارہی تھی۔ کیونکہ بلآخر ایسا کیسے ہوسکتا ہے کہ کوئی بھی بڑی سیاسی جماعت خواہ وہ حکومت کی ہے یا اپوزیشن کی وہ جانتی ہے کہ جو انہیں اقتدار میں لائے ہیں وہ اُن کے خلاف نہیں جا سکتی۔

حکومت کی جانب سے مسلح افواج کے سربراہان کی مدتِ ملازمت کے معاملے پر متعلقہ قوانین میں ترمیم سپریم کورٹ کی جانب سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدتِ ملازمت کے معاملے پر دیے گئے احکامات کے بعد کی گئی ہے۔

سپریم کورٹ نے جنرل باجوہ کو چھ ماہ کی مشروط توسیع دیتے ہوئے حکم دیا تھا کہ اس سلسلے میں قانون سازی کی جائے ورنہ جنرل باجوہ چھ ماہ بعد ریٹائرڈ ہوں جائیں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us