سندھ کے بچے تعلیم سے محروم، اسکول انتظامیہ نے بچوں کو نکال پھینکا

سندھ کے شہر کوٹڑی میں اسکول سے ایک ساتھ  100 بچوں کو نکالا گیا جس پر والدین سراپا احتجاج ہیں۔ تفصیلات کے مطابق کے اسکول سندھ ایجوکیشنل فائونڈیشن چلا رہا ہے، اس اسکول میں غریبوں کے بچے زیرِ تعلیم ہیں۔

والدین کے مطابق بچوں کے پاس اسکول کی کتابیں، اور یونیفارم نہ ہونے کے باعث ان کو اسکول سے نکال دیا گیا ہے۔ والدین کا کہنا ہے کہ موجودہ حالات میں، اور اتنی مہنگائی میں، غریب والدین کے لئے بچوں کے ایک ساتھ اخراجات اٹھا مشکل ہو جاتا ہے۔ مگر اسکول انتظامیہ کو اس بات کا ذرا بھی احساس نہیں کہ ان کے اسکول میں غریبوں کے بچے پڑھتے ہیں، جن کی بہت مجبوریاں ہوتی ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ یہ ہمارے ساتھ ظلم ہے اور بچوں کے مستقبل کے ساتھ کھلواڑ ہے۔ والدین نے حکومت سندھ سے گذارش کی ہے کہ وہ سندھ ایجوکیشن فائونڈیشن کے خلاف نوٹس لیں، دوسری صورت میں وہ بچوں کے ساتھ مل کر سڑکوں ہر احتجاج کریں گے۔

سندھ ایجوکیشن فائونڈیشن 1992 میں سندھ ایجوکیشن فائونڈیکشن ایکٹ کے تحت بنایا گیا تھا۔ یہ ایک نیم خودمختار ادارہ ہے جو سندھ میں تعلیمی نطام کو بہتر کرنے کے لئے بنایا گیا تھا، مگر انہوں نے تو غریب بچوں کو ہی اسکول سے باہر کردیا، انہیں تعلیم سے محروم کر دیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us