نیا کپتان اور نئی مینجمنٹ ہے، سرفرازاحمد

سابق قومی کپتان سرفراز احمد نے کہا ہے کہ اچھا برا وقت سب پر آتا ہے۔ پاکستان کے لیے کھیلنا چاہتا ہوں۔ ضروری نہیں کہ قیادت ہی کروں، کپتانی چھوڑنے کے لیے مجھ پر کوئی دباؤ نہیں تھا۔

پی سی بی کے ایم ڈی وسیم خان نے مجھ سے کہا کہ فی الحال آپ ڈومیسٹک کرکٹ پر توجہ دیں، قومی کرکٹ ٹیم کے لیے نیک خواہشات ہیں۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار اتوار کو نیشنل اسٹیڈیم میں پریس کانفرنس کے دوران کیا۔

سرفراز احمد نے کہا کہ شکر ادا کرتا ہوں کہ پاکستان کی قیادت کرنے کا اعزاز ملا۔ سو سے زائد میچز میں پاکستان ٹیم کی کپتانی کا اعزاز حاصل ہوا ۔ تینوں فارمیٹ میں جتنا ہوسکا پاکستانی ٹیم کی بہتری کیلئے اقدامات کیے۔ چیئرمین پی سی بی احسان مانی اور چیف سلیکٹر و ہیڈ کوچ مصباح الحق نے فون پر رابطے کیے شائقین کا بھی شکریہ ادا کرتا ہوں جنھوں نے میرے لیے دعائیں کیں۔ ایم ڈی پی سی بی وسیم خان نے قومی قیادت سے مستعفیٰ ہونے اور ڈومیسٹک کرکٹ پر توجہ دینے کو کہاہے اس پر فوکس ہے۔ ایسی کوئی بات نہیں کہ دباو ڈالا گیا کہ قیادت چھوڑ دوں۔ نئے کپتان بابر اعظم کیلئے نیک خواہشات ہیں کہ وہ پاکستانی ٹیم کو اچھا لیکر چلے۔ آسٹریلیا کا دورہ آسان ثابت نہیں ہوتا۔ نیا کپتان اور نئی مینجمنٹ ہے۔ سنبھلنے میں وقت لگے گا۔ اچھا برا وقت سب پر آتا ہے۔ فخر زمان پہلے ہی پاکستانی ٹیم کیلیے ہیرو ثابت ہوچکے ہیں۔ بابر میرے ساتھ رہا اور اسکے ساتھ بھرپور تعاون کیا۔ فارمولا کوئی نہیں، بہترین کھلاڑیوں پر مشتمل ٹیم بنائی گئی ہے، میرے مایوس ہونے یا نہ ہونے سے کچھ نہیں فرق پڑتا، مجھے کپتانی سے ہٹانے کا فیصلہ پی سی بی نے کیا، میں نے پاکستان کیلئے کھیلنا ہے چاہے کوئی بھی کپتان ہو۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us