این آئی سی وی ڈی پان کی پچکاری میں

بلاول بھٹو کے مطابق وہ دلوں کو جوڑتے ہیں توڑتے نہیں، اور اپنے بڑوں کی طرح عوام کی خدمت میں اپنی زندگی صرف کریں گے۔ باتوں تک یہ بات بلکل ٹھیک ہے لیکن اصل میں صورت حال اس کے برعکس ہے۔ این آئی سی وی ڈی جہاں مریض دل کا علاج تو کرواسکیں گے مگر وہاں آنے کے بعد انہیں کئی قسم کی دوسری بیماریاں لاحق ہونے کا خطرہ ہے۔ 

یہ بھی پڑھیں:متحدہ کے کارکنان کو کے الیکٹرک کا سہارا

شہری نے سندھ میں نیشنل انسٹیٹوٹ آف کارڈیو ویسکولر ڈیزیزس (این آئی سی وی ڈی اسپتال کے جنرل وارڈ کی کھڑکیوں کے پیچھے کے مناظر ریکارڈ کیے تو صورت حال کیا سامنے آئی آپ بھی دیکھیے اس ویڈیو میں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us