کئی افراد کے قتل میں ملوث ٹارگٹ کلر آزاد

لا اینڈ آرڈر کی ہمارے ملک میں صورت حال اتنی بری ہوچکی ہے کہ اب انصاف قتل ہونے والے افراد کے لواحقین نہیں بلکہ قتل کرنے والا ملزم مانگتا ہے۔ سالہا سال مقدمات چلتے رہتے ہیں اور سانحہ ساہیوال اور بلدیہ فیکڑی جیسے واقعات کے عینی شاہد آہستہ آہستہ منظر سے غائب ہوجاتے ہیں۔

ایم کیو ایم لندن کے ٹارگٹ کلر کی گرفتاریاں جاری ہیں۔ ایسٹ زون پولیس نے ایس پی اور ان کے ڈاکٹر دوست سمیت متعدد افراد کی ٹارگٹ کلنگ میں ملوث ایم کیو ایم لندن کے ٹارگٹ کلر کو گرفتار کرلیا۔ گرفتار کلر رئیس مما کی ٹارگٹ کلنگ ٹیم کا انچارج ہے۔ ڈی آئی جی ایسٹ عامر فاروقی کے مطابق ایسٹ زون پولیس نے ایم کیو ایم لندن سے تعلق رکھنے والے ٹارگٹ کلر ذوالفقار بھٹہ کو گرفتار کرلیا۔ انہوں نے بتایا کہ گرفتار ملزم کو کورنگی میں دہشت کی علامت سمجھا جاتا تھا۔ ملزم سیکٹر انچارج رئیس مما کی ٹارگٹ کلنگ ٹیم 72 کا انچارج ہے۔

ڈی آئی جی ایسٹ نے مزید بتایا کہ گرفتار ملزم نے 28 مئی 2012 کو رئیس مما کے کہنے پر اپنے ایس پی شاہ محد شاہ اور ان کے دوست ڈاکٹر دلشاد کو کورنگی لیبر اسکوائر بنگالی پاڑہ میں واقع کلینک سے نکلتے ہوئے فائرنگ کرکے قتل کردیا تھا۔ اسکے ساتھ ہی مجرم نے اعتراف کیا کہ ا نے ایم کیو ایم حقیقی کے متعدد کارکنوں کو اغوا کرکے تشدد کیا اور فائرنگ کرکے قتل کیا۔ عامر فاروقی کے مطابق 2014 میں ملزم نے بانی ایم کیو ایم کی تصویر اپنے دفتر سے ہٹانے پر ڈی ایس پی کورنگی پر ناصر جمپ کے قریب فائرنگ کی تھی جس کے نتیجے میں ڈی ایس پی کا گن مین زخمی ہوا تھا۔ 2013 میں کورنگی نمبر 2 چنیوٹ اسپتال کے سامنے گلی میں رہائش پزیر ڈپٹی ٹاؤن آفیسر عامر زئی کو گھر کے دروازے پر قتل کیا تھا۔ گرفتار ملزم نے ایم کیو ایم حقیقی کے زیر اثر علاقے رحیم آباد پر متعدد افراد ہلاک اور زخمی کیے۔ ایم کیو ایم سمیت دیگر اور سیاسی جماعتوں کے اسی طرح کے بے شمار ٹارگٹ کلر آخر کب گرفتار ہوسکیں گے؟ کب انہیں قانون کے شکنجے میں لے کر ان کے ہاتھوں بے ابرو، تباہ و برباد اور قتل ہونے والوں کے لواحقین کو انصاف مل سکے گا؟

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us