متحدہ کے کارکنان کو کے الیکٹرک کا سہارا

کراچی کے علاقے گلشن نور میں کے الیکٹرک کی جنب سے پی ایم ٹیز تو لگادیں گئیں۔ لیکن مکینوں کو بجلی کے کنکشن فراہم نہیں کیے گئے۔ جس کے متحدہ کے کارکنان نے گلشن نور ویلفیئر کے نام سے ایک ویلفیئر بنائی۔ آئی بی سی سرجانی ٹاؤن کے ذمہ دار عظمت اور جہانزیب علاقے میں بجلی کے کنکشن فراہم کرنے آئے تو متحدہ کارکنان نے انہیں بھتے کا راستہ دکھادیا۔ جس کے بعد کے الیکٹرک حکام نے گلشن نور میں اعلان کروادیا کہ جو مکین گلشن نور ویلفیئر سے بجلی کے کنکشن کی این او سی لے کر آئے گا صرف اسے ہی بجلی کا کنکشن دیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:متحدہ کے کارکنان کو کے الیکٹرک کا سہارا

گلشن نور ویلفیئر اس وقت ریزیڈینشل کنکشن کےکی این او سی کے لیے ایک لاکھ روپے رشوت وصول کر رہی ہے۔ این او سی لینے کے بعد مکین کو کے الیکڑک دفتر پہنچ کر این او سی دکھانا ہوتا ہے۔ جس کے بعد یہ بتایا جاتا ہے کہ آپکو میٹر کا نمبر اسی صورت میں مل سکتا ہے جب آپ 57 ہزار روپے کی ادائیگی کریں گے۔

علاقہ مکینوں نے کے الیکٹرک اور متحدہ کے کارکنوں کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ کے الیکٹرک عملہ گلشن نور میں قانونی طریقے سے کام کرنے آئی تھی مگر وہ متحدہ کے ساتھ مل گئی۔ اب دونوں مل کر ہمیں لوٹ رہے ہیں۔

ذرائع کے مطابق بھتہ وصولی بند ہونے کے بعد متحدہ کے کارکنان حنیف میئو، جبار عارف دھوبی، فہم خان،  خالد نوید، عرفان میئو، اکبر ساجد عرف پینٹو، شاہد حسین نے پہلے بجلی کے غیر قانونی کنکشن لگا کر پیسے لیتے تھے لیکن کے الیکٹرک کے پی ایم ٹی نصب کرنے کے بعد انہوں نے کے الیکٹرک کو اپنے ساتھ ملا کر عوام کو لوٹنا شروع کردیا۔ 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us