بھارتی فلم کی شوٹنگ گلشنِ اقبال میں جاری

بزرگوں کو ہمیشہ کہتے سنا کہ مغرب سے پہلے گھر پہنچنا بہتر ہوتا ہے۔ سارے کام مغرب سے پہلے سمیٹ لیا کرو۔ اگر آپکے بزرگ بھی یہ کہتے تھے اور کہتے ہیں تو انکی بات ضرور سنیں کیونکہ اب ہمارے شہر کی سڑکیں بلکل بھی محفوظ نہیں رہیں۔ نشے میں دھت لوگ جو کبھی فٹ پاتھ اور پلوں کے نیچے دکھائی دیتے تھے اب اس طرح کے لوگ آپ کو بڑی بڑی گاڑیوں میں شاہراہوں پر تماشے کرتے کہیں بھی ٹکرا سکتے ہیں۔

کچھ ایسا ہی ہوا کراچی کے علاقے گلشنِ اقبال میں۔ بڑے باپوں کی بگڑی اولادیں شراب کی بوتلیں گاڑیوں میں بھر کر نشہ کرتے ہیں اور سڑکوں پر گاڑیاں دوڑاتے پھرتے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق نشے میں دھت کار سوار نے ایک موٹر سائیکل سوار کو ٹکر مار کر شدید زخمی کردیا۔ اور شہریوں کے گھیراؤ کرنے پر کھلے عام اس کے گارڈز اور چمچوں نے عوام پر اسٹریٹ فائرنگ شروع کردی۔ فائرنگ کرتے ہوئے نیپا چورنگی سے گلشن چورنگی سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us