عمران خان کا اپنی ٹیم پر شک!

وہ  ٹیم جس کی کارکردگی پر عمران خان کو فخر تھا، جس کے گن وہ صبح شام گایا کرتے تھے، آج اُسی سے خوفزدہ ہیں۔

عمران خان کا اسلام آباد میں آج پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس ہوا۔ یہ اجلاس یوں تو معمول کے مطابق آف کیمرہ اجلاس تھا جس میں میڈیا کو اندر آنے کی اجازت نہیں تھی۔ لیکن عمران خان کی سابقہ کئی ایسی میٹنگز ہوئی ہیں جس میں ان کے اپنے میٹنگ میں موجود افراد ایسی باتیں باہر آہ کر میڈیا میں ‘لیک’ کر دیتے ہیں جس سے بعد میں عمران خان برہم اور شرمندہ ہوتے رہتے ہیں۔

اس صورتحال اور شرمندگی سے بچنے کے لیے عمران خان صاحب نے نیا ٹوٹکا نکالا۔ اور وہ یہ، کہ کسی بھی شخص کو اندر میٹنگ میں موبائل فون، پرس، ایپل کی گھڑیاں یہ کوئی بھی ایسا سامان لے کر جانے کی اجازت نہیں تھی۔ اندر جو بھی ہو، اس میٹنگ کی پیش رفت، خان صاحب کی مرضی کے بغیر باہر لیک نہیں کی جاسکے۔

اب ایسی صورتحال میں بندہ یہ سوچتا ہے کہ خان صاحب اور سیاستدانوں پر تنقید تو ہوتی ہی رہتی ہے اور وہ اس تنقید کا سامنا کرتے رہتے، کبھی مزاق تو کبھی غصے کے ساتھ، لیکن یہ ایسا کیا ہوا کہ خان صاحب اتنا insecureہو گئے، اور بھی اپنی ہی پارٹی کے لوگوں سے؟ یا کیا پتا پتا، میٹنگ میں کطھ متنازع باتوں کا ارادہ ہو؟

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us