گیس چوروں کےلیے14سال کی سزا

اسلام آباد: سپریم کورٹ کے قائم مقام چیف جسٹس عظمت سعید کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے گیس چوری کے ملزم کی درخواست ضمانت پر سماعت کی۔

لکی مروت سے تعلق رکھنے والے ملزم کی درخواست ضمانت خارج کرتے ہوئے جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ ملزم چوری کی گیس سےبجلی بنا کر فروخت کرتاتھا۔ متعلقہ محکمہ پوچھنے آتا تو پستول تان لیتا تھا جبکہ سماعت کے دوران جسٹس قاضی امین نے کہا کہ ملزم پورے محلے کو بجلی فروخت کرتا تھا۔

چیف جسٹس آصف کھوسہ کے بیرون ملک دورے کے دوران قائم مقام چیف جسٹس جسٹس عظمت سعید نے ریمارکس دیے کہ گیس چوروں کو ضمانت نہیں دے سکتے۔ ملزم پرجرم ثابت ہوگیا تو 14 سال قیدکی سزابنتی ہےاور گیس چوروں کےلیے14سال سزا کم ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us