کیا زائرین عراق نہیں جاسکیں گے؟  

اربعین کے موقع پر مقدس شخصیات کے روضوں کی زیارت کی غرض سے ہزوراں زائرین ہر سال پاکستان سے عراق جاتے ہیں۔ جس کے لیے وہ ٹریول ایجنٹس اور فضائی کمپنیوں سے رابطے کرتے ہیں۔ اربعین کے موقع پر زائرین کی بہت بڑی تعداد وقت سے پہلے ٹکٹ بک کروا لیتی ہے۔ 

یہ بھی پڑھیں:متحدہ کے کارکنان کو کے الیکٹرک کا سہارا

اس لیے گزشتہ سال اربعین کے بعد سے روال سال کے لیے ٹکٹس بک کروائی جاچکی تھیں۔ اور یکم اکتوبر سے پروازے روانہ ہونا شروع ہوتیں لیکن عراقی حکومت کی جانب سے ویزوں کے اجرا میں تاخیر کی گئی۔ جس کے بعد پاکستانی زائرین عراق کے لیے روانہ نہیں ہوسکے تھے۔ جن زائرین نے 8 اکتوبر سے پہلے کی ٹکٹیں بک کروائیں تھیں۔ انہوں نے جب روانگی کی تاریخ میں توسیع کے لیے متعلقہ ٹریول ایجنٹس اورہوائی کمپنیوں سے رابطہ کیا تو انہیں بتایا گیا کہ ٹکٹ ری فنڈنہیں ہوسکتے ہیں۔ جبکہ متبادل پرواز اربعین کے بعد ہی مل سکے گی۔ جس سے ہزاروں زائرین کے لاکھوں روپے ٹریول ایجنٹس اور ٹریول کمپنیوں کی جیبوں میں چلے گئے ہیں۔

زائرین بہت پریشان ہیں کیونکہ نہ اب وہ عراق جا سکتے ہیں نہ انکے پیسے واپس کیے جارہے ہیں اور نہ ہی انہیں کوئی متبادل پرواز مہیا کی جارہی ہے۔ جبکہ متعلقہ اداروں کی جانب سے انکی کوئی مدد نہیں کی جارہی۔ 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us