فوڈ ایپز، سکون یا بے سکونی؟

کھانے کی مختلف آئوٹلٹس میں جس قدر تیزی سے اضافہ ہورہا ہے اسی قدر ان کی قیمتوں میں بھی طرح طرح کی کمی بیشی کے ساتھ بیت سی چیزیں دستیاب ہیں۔

اور اسی کے زیر اثر بہت سی فوڈ ڈیلیوری ایپز کا بھی تعارف ہوا ہے، جن سے بہت زیادہ آسانی واقع ہوگئی ہے۔

اسی کے ساتھ ساتھ ان ایپز نے لوگوں کو متوجہ کرنے کے لیئے بہترین قسم کے ڈسکائونٹس بھی دیئے جن سے کثیر تعداد میں عوام نے فائدہ اٹھایا لیکن یہ فائدے بعض اوقات مصیبت بھی بن جاتے ہیں۔

ایپز میں سہولت کے لیئے پری پیمنٹ یا بینک کی ذریعے براہ راست ادائیگی کی سہولت موجود ہے جس کی وجہ سے  کافی آسانی ہوگئی ہے۔

لیکن وہ کہتے ہیں نہ کہ ہر عروج کو زوال ہے، تو شاید ایسا ہی کچھ حال ہوا ہے ان  فوڈ ڈیلیوری ایپز کا بھی۔  آپ کھانا آرڈر کریں تو یاد رکھیں کہ بینک کے ذریعے پے نی کریں کیوں کی پھر آپ کا کھانا ؤرڈر بھی ہوجائیگا، پیسے بھی کٹ جائینھے اور کھانا۔۔۔ جی وہ نہیں آئے گا اور جب آپ معلوم کریں گے تو جواب آئیں بائیں شائیں۔

اگر آپ بھی فوڈ ڈیلیوری ایپز کا استعمال کرتے ہیں تو کھانا آنے کے بعد پے کریں۔ ورنہ ہاتھ آئے گا کچھ نہیں اور گلاس ٹوٹے گا 12 آنے!

 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us