کتا بنے گا، وائٹ ہاوٗس کا شاہی مہمان!

دنیا بھی کیا ہی عجیب جگہ ہے۔ اور صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا دفتر تو اس بھی زیادہ عجیب!

کسی سے اگر رتی برابر بھی خوش ہوں تو اسے سر کا تاج بنا دیتے ہیں اور کسی سے ایک زرا برابر بھی فائدے کی توقع نہ ہو تو اس کا ساتھ شاہ سے گدا والا سلوک کرتے ہیں۔

ایسی ہی مثال ایک کتے کی ہے، جو اس وقت امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی توجع کا مرکز بنا ہوا ہے، یہاں تک صدر ٹرمپ نے اسے وائٹ ہاوٗس آنے کی دعوت بھی دیدی ہے۔

یہ کوئی عام سا خوبصورت کتا نہیں ہے، بلکہ وہ ہے، جس نے دنیا کی سب سے بڑی دہشت گرد تنظم داعش کے بانی، ابو بکر البغدادی کی نشاندہی کر کے اس کو ہلاک کروایا ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس کتے کا نام نہ ظاہر کرتے ہوئے، اس کی تعریف اپنے ایک ٹویٹر پیغام  میں کی تھی، جس میں لکھا تھا کہ یہ ہے وہ شاندار کتا جس نے ابو بکر البغدادی کو پکڑوانے اور ہلاکت میں مدد کی تھی۔

اس وقت تو صدر ٹرمپ نے اس کتے کا نام نہیں لیا تھا، لیکن بعد میں سرکاری ذرائع کے مطابق اس کا نام ‘کینن’ بھی ظاہر کر دیا گیا۔

ابو بکر کی نشاندہی کے دوران یہ کتا زخمی بھی ہوا تھا جو اب ٹھیک ہوچکا ہے۔

ابو بکر البغدادی داعش کا بانی اور لیڈر مانا جاتا تھا، جسے امریکہ کی جانب سے کئی سالوں کی کوشش اور جدوجہد کے بعد یکم نومبر کو مغربی شام میں ہلاک کیا تھا۔

پنٹاگون کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ ابو بکر البغدادی کی راکھ، سمندر کی نظر کر دی گئی ہیں جیسے طالبان کے بانی اُسامہ بن لادین کی لاش کی گئی تھی۔

داعش کے اعلان کے مطابق، ابو بکر البغدادی کی ہلاکت کے بعد نیا ترجمان ابو حمزہ القریشی مقرر کر دیا گیا ہے۔ اس بیان میں ابو بکر کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے، اس پر گہرے افسوس کا اظہار بھی کیا گیا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us