ڈاکٹرز کی لاپروائی نے بچی کی جان لے لی

کراچی لیاقت آباد ڈاکخانے کے قریب غلط انجکشن لگنے سے ایک بچی فوت ہوگئی۔ بچی کا نام کائنات تھا اور اس کی عمر صرف 13 سال تھی۔ کائنات کو معمولی بخآر تھا، اس کے والدین اس کو علاقے کی ایک کلینک لے گئے جہاں بچی کو انجیکشن لگایا گیا۔ بچی کے ہاتھ میں اسی رات انفیکشن ہوگیا، جس کے بعد اس کے والدین اس کو ہسپتال لے گئے۔ بچی کے ہاتھ سے شروع ہونے والا انفکشن پورے ہاتھ سے سینے تک پھیل گیا تھا۔

کائنات فالج کے مرض میں مبتلا تھی۔ 23 گھنٹے کے اندر اندر کائنات ہسپتال میں انتقال کر گئی۔ کائنات اپنے بہن بھائیوں میں سب سے چھوٹی تھی اور وہ چھٹی جماعت کی طالبِ علم تھی۔ کائنات کے تین بھائی بہن تھے۔ کائنات لیاقت آباد مکان نمبر 1/417 کا رہائشی تھی۔ کائنات کی لاش کو پوسٹ مارٹم کے لئے جناح اسپتال روانہ کیا گیا۔ والدین نے اس واقعے کی رپورٹ پولیس میں درج کروائی ہے۔ پولیس کی جانب سے مزید تحقیقات جاری ہیں۔

اس ملک میں ڈاکٹرز کو صرف پیسہ بنانے سے مطلب ہے وہ مریضوں کو سہی توجہ نہیں دیتے ہیں۔ ان کوصرف اپنے نمبرز پورے کرنے سے مطلب ہوتا ہے۔ ان کی لاپروائی کی وجہ سے اکثر معصوم جانیں چلی جاتی ہیں۔ وہ مریضوں کا صحیح معائنہ نہیں کرتے۔ الٹی سیدھی دوائیں دے کر اور انجیکشن لگا کر مریضوں کی زندگیوں سے کھلواڑ کرتے ہی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us