موذن کی بچی سے ایک ماہ تک زیادتی

 

ہندستان  کے شہر دہلی میں ایک موذن ایک ماہ تک ایک آٹھ سالہ بچی کو زیادتی کا نشانہ بناتا رہا۔ یہ جرم کا احتراف اس جعلی مولوی نے خود کیا ہے۔ یہ جعلی مولوی جو جسم سے لے کر روح تک ناپاک ہے وہ اکثر امام صاحب کے نا آنے پر نمازیوں کو نماز بھی پڑھاتا تھا۔ وہ ہمدرد یونیورسٹی میں بھی نماز پڑھاتا تھا۔ 

یہ بھڑیا نما انسان معصوم بچی کے ساتھ ایک ماہ زیادتی کرتا رہا۔ یہ بھیڑیا بچی کو قرآن پڑھانے اس کے گھر جاتا تھا۔ جہاں اکیلے ہونے کا فائدہ اٹھا کر اس کے ساتھ زنا کرتا تھا۔ ایسے جعلی مولوی دین تو کیا انسانیت پر کالا دھبا ہیں۔ وہ ایسے شیطان ہیں جو داڑھی کے پیچھے چھپ رہے ہیں۔

چاہے انڈیا ہو یا پاکستان اس قسم کے شیطان نما انسان ہر جگے موجود ہیں۔ یہ داڑھی رکھ کر داڑھی کی توہین کرتے ہیں۔ یہ ہوس کے پجاری ہیں۔ یہ جعلی مولوی دو بچیوں کا باپ ہے اور دو بچیوں کا باپ ہونے کے باوجود اس کو بچی پر ذرا ترس نہ آیا۔ جعلی ملولوی کی احترافی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی. 

 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us