معاون اداکارسے لیڈ رول تک کے سفر میں ٹرننگ پوائنٹ کیا تھا؟

عمران اشرف نے بی بی سی ایشیا کو انٹرویو دیتے ہوئے اپنی جدو جہد سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ اداکاری ایک فن ہے اور اس فن میں فٹنس، جھیل جیسی آنکھیں یا حسین بالوں کی ضرورت نہیں ہوتی اس لئے میں صرف حقیقی فنکاری کرنے کی کوشش کرتا ہوں۔

عمران اشرف کا کہنا ہے کہ 8 سالہ جدوجہد میں لوگ میرا مذاق اڑاتے تھے کہ تم پاگل ہو "چھوٹے معاون اداکار” ہو۔ مگر میں نے جدوجہد جاری رکھی اور آج کامیاب ہوں۔

بھولے کے کریکٹر سے شہرت کی بلندیوں پر پہنچنے والے عمران اشرف نے مزید یہ بھی کہا کہ میرے لئے ڈرامہ ’الف اللہ اور انسان‘  سنگ میل ثابت ہوا۔

 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us