خواتین کے بغیر بلوچ فلم انڈسٹری چل نہیں سکتی، انیتہ جلیل

بلوچی فلم انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی نوجوان فنکارہ انیتہ جلیل نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ بلوچ فلم انڈسٹری کئی قسم کی رکاوٹوں اور پسماندگی کے باوجود مسلسل ترقی کررہی ہے اور بلوچ خواتین کا فلم انڈسٹری میں آنا ایک خوش آٸند عمل ہے۔ بہت جلد ان کی فلم ”بلوچ آباد“ ریلیز ہونے جارہی ہے جس میں ان کے ساتھ بلوچی فلم انڈسٹری کے نامور فنکار سرفراز محمد، احسان دانش اور دوسرے اداکار شامل ہیں۔

انیتہ نے اپنے پچھلے دنوں واٸرل ہونے والے ویڈیو بیان کو واپس لیتے ہوئے  کہا کہ انھوں نے جذباتی ہوکر اپنے طبیعت کی ناسازی پر انتہاٸی ڈپریشن کے وقت وہ ویڈیو بناٸی تھی، جس میں انہوں نے بلوچ لڑکیوں کو فلم انڈسٹری سے دور رہنے کا مشورہ دیا تھا اور بلوچی فلم انڈسٹری سے اپنی بیزاری کا اظہار کیا تھا۔

انیتہ کہتی ہیں کہ اس وقت وہ انتہاٸی مایوسی اور تکلیف سے گزر رہی تھیں اور وہ سمجھتی ہیں کہ انھیں یہ نہیں کہنا چاہیے تھا، وہ کہتی ہے ”میں ان تمام لوگوں کی شکرگزار ہوں جنھوں نے اس معاملے کو ڈسکس کیا، چاہے وہ میرے مخالفت میں کیا ہو یا میرے حق میں، میں سب کی شکرگزار ہوں“


اس سے پہلے انیتہ کہہ چکی ہے کہ ان کا کسی بھی شخص یا ادارے سے کوٸی بھی دشمنی نہیں ہے اگر انھیں آٸندہ کسی بھی کردار کو ادا کرنے کا موقع ملا وہ بلوچی فلم انڈسٹری کیلے ضرور کرینگی،
ایل آر نیوز سے بات کرتے ہوٸے انیتہ کہتی ہے ”بلوچ فلم انڈسٹری میں خوبصورتی آرہی ہے کہ بجاٸے مردوں کو برقعہ اور دوپٹہ پہنا کر ان سے خواتین کے رولز کراۓ جاٸیں اور ایک مصنوعی ماحول بنایا جاٸے، خواتین اپنے کرداروں کو بہترین احساسات کے ساتھ ادا کرسکتی ہیں“
انیتہ کو اس بات کی بے حد خوشی ہے کہ گوادر میں جنز آرٹ اکیڈمی کے ساتھ مزید لڑکیاں کام سیکھ رہی ہیں،


انیتہ کہتی ہے کہ ایک دفعہ کوٸٹہ میں وزیر بلوچستان کے سامنے انھوں نے یہ سوال رکھنے کی کوشش کی ہے کہ گوادر میں ایسی اکیڈمی کی ضرورت ہے جہاں لڑکیاں اکیڈمک بنیاد پر ایکٹینگ سیکھیں اور والدین اور معاشرہ انھیں حقارت سے نہ دیکھیں.

وہ کہتی ہے کہ بحیثیت بلوچ لڑکی وہ آج بھی کئی ایسے گھریلو کردار یا خواتین کے لیے ایسے کردار نبھانے سے اجتناب کرتی ہے جسے معاشرہ ان کی ذاتی زندگی کے ساتھ جوڑ کر اندازے قاٸم کرنے لگے، مرد اپنا رول ادا کر سکتا ہے اور خواتین اپنا، بلوچ فلم انڈسٹری خواتین کے بغیر نہیں چل سکتی، انھیں فخر ہے کہ وہ اس انڈسٹری کا حصہ ہیں، وہ اپنے اس بیان کو واپس لیتی ہے جو انہوں نے جذباتی ہوکر ریکارڈ کیا تھا،

انیتہ جلیل بلوچ نے ایل آر نیوز سے گفتگو کرتے ہوٸے بلوچ لڑکیوں اور فلم انڈسٹری کیلے ان کی آنے والی فلم بلوچ آباد جس میں بلوچ لڑکیوں کی تعلیم کا موضوع بھی شامل ہے اسے دیکھنے کی درخواست کی ہے اور اس بات کا اظہار بھی کیا ہے کہ آٸندہ بھی وہ فلم انڈسٹری کے دوستوں کے ساتھ مل کر اس کی ترقی میں اپنا کردار ادا کرتی رہیں گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us