بلدیہ ملیر 680 غیر قانونی بھرتیاں بے نقاب

اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ایسٹ زون مجسٹریٹ کے ہمراہ ڈسٹرکٹ میونسپل کمیشن ملیر کے دفتر پر چھاپہ مار کر اہم دستاویزات سمیت پچھلا تمام ریکارڈ قبضے میں لے لیا گیا۔

اطلاعات کے مطابق ڈی ایم سی میں بد عنوانی کے ذریعے خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچایا گیا۔ 12 کروڑ روپے سے زائد کے گھپلے ترقیقتی اور الیکٹریکل انجینیئرنگ کے منصوبوں کی مد میں کیے گئے ہین۔ اسی طرح جعلی بلوں کے ذریعے مرمتی کاموں کی مد میں گزشتہ ڈھائی برس کے دوران 9 کروڑ روپے کی خطیر رقم ہڑپ کی گئی۔

اینٹی کرپشن حکام کے مطابق دستاویزات کے ذریعے 680 غیر قانونی بھرتیوں کا بھی انکشاف ہوا ہے۔ ڈی ایم سی ملیر نے ٹیکس کی مد میں وصول کی گئی رقم میں سات کروڑ روپے سے زائد فراڈ کے ذریعے کم ظاہر کیے گئے۔ اسی طرح جاری کیے جانے والے بیشتر کنٹریکٹ جعلسازی کے ذریعے فرنٹ مینوں کو دیے گئے۔گاڑیوں کی مرمت اور فیول کی مد میں بھی 4 کروڑ روپے سے زائد رقم خوردبرد کی گئی۔  اینٹی کرپشن حکام نے مزید بتایا کہ تمام ریکارڈ کی جانچ پڑتال کی جارہی ہے۔ تحقیقات مکمل ہوتے ہی چند یوم میں ذمہ داران کے خلاف مقدمہ درج کرکے گرفتاریاں عمل میں لائی جائیں گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us