تبدیلی میں ایک بار پھر تبدیلی!

حکومت کے یہ کھیل کب ہونگے پرانے؟ یا کب چھوڑے گی حکومت عوام کا دھیان بڑے مدعوں سے ہٹانا ؟ کیونکہ اتنی جلدی تو ملک کا موسم نہیں بدلتا جتنی جلدی حکومتی فیصلے!

جن سے نہ سنبھل سکا ایک عہدہ حکومت نے کیوں دیا انہیں دوسرا عہدہ ؟ وزیر خزانہ  رہنے والےاسد عمر ایک دفعہ پھر سیاسی عہدوں کی بھاگ ڈور میں سرگرم نظر آرہے ہیں۔ آج بروز ۱۹ نومبر کو ایوان صدر میں اسد عمر کی حلف برداری کی تقریب ہوئی ، جس میں اسدعمر نے وفاقی وزیر کے عہدے کا حلف اٹھایا۔

معاونِ خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ٹویٹ کے ذریعے آگاہ کیا تھا کہ وفاقی کابینہ میں توسیع اور ردوبدل کا فیصلہ کیا گیا ہے، اسد عمر کو وزیر برائے منصوبہ بندی اور اسپیشل انیشٹو ، خسرو بختیار کو وزیر پیٹرولیم بنانے کا فیصلہ کیا گیا، وزارتوں کا نوٹی فکیشن جلد جاری کردیا جائے گا۔

وزارتوں میں ردوبدل کی وجہ کیا بن رہی ہے، اصل سوال حکومت کے طرف یہ اٹھتا ہے؟  کیا حکومت اپنے پرانے ساتھیوں سے پریشان ہوگئی ہے یا کوئی نئی حکمت عملی کے پیش نظر یہ سب کیا جا رہا ہے ؟

یاد رہے کہ رواں سال اپریل میں اسد عمر کے استعفیٰ کے بعد وزیراعظم عمران خان نے وفاقی کابینہ میں بڑی تبدیلیاں کرتے ہوئے کئی وزرا کے قلم دان تبدیل کردیئے تھے، فوادچوہدری کوسائنس و ٹیکنالوجی اور غلام سرور کو ایوی ایشن کی وزارت دی گئی، جب کہ میاں محمد سومرو سے ایوی ایشن کا اضافی چارج واپس لے لیا گیا تھا۔ مطلب تبدیلیاں ہزار، افاقہ ندارد۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us