چین مسلمانوں کے لیے محفوظ ملک نہیں

پوری دنیا میں مسلمانوں کو بے دردی سے مارا جارہا ہے۔ انکی نسل کشی کی جارہی ہے۔ کشمیر ہو فلسطین شام  ہو یا عراق  اور  یمن  جیسے کئی ممالک۔  ہر جگہ صرف اور صرف مسلمان  ہی مر رہا ہے۔ ایسے میں امریکہ کی جانب سے ایسا بیان سامنے آنا اور وہ بھی اس ملک کے حوالے سے جس سے ہماری دوستی ہمالیہ سے اونچی اور بحیرہ عرب سے زیادہ گہری ہے۔

یہ بھی پڑھیں: زنا کے الزام میں عورت بِک گئی

وزیراعظم عمران خان اس وقت چں کے دورے پر ہیں۔ ایسے میں امریکہ کی جانب سے سامنے آنے والے ایک بیان نے سب کی توجہ اپنی جانب مرکوز کرلی۔ امریکی انتظامیہ نے چین میں مسلمانوں سے بد سلوکی کرنے کے الزام پر 28  چینی کمپنیوں کو بلیک لسٹ کردیا ہے۔ جس کے بعد یہ کمپنیاں اس وقت تک تجارت نہیں کرسکیں گی جب تک امریکی وزارت خزانہ سے اجازت نامہ جاری نہ کردیا جائے۔    

تفصیلات کےمطابق چین میں ایغور مسلم اقلیت کے حقوق کی خلاف ورزی پر ایسا کیا گیاہے۔ جبکہ امریکی انتظامیہ کے اس فیصلے سے  نگرانی کے آلات بنانے والی کمپنی ہک ویژن، مصنوعی ذہانت کی کمپنیاں میگوی ٹیکنالوجی اور سینس ٹائمز بھی شامل ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us