کے ایم ڈی سی کالج میں کروڑوں کی کرپشن

کراچی میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالج میں ماہانہ کروڑوں کی کرپشن ہونے کا انکشاف ہوا ہے،سندھ حکومت ماہانہ کے ایم ڈی سی  کالج نارتھ ناظم آباد کو 4 کروڑ روپے فراہم کرتی ہے۔لیکن بد قسمتی کے ساتھ وہ رقم ڈھائی سے 3 کروڑ روپے تک کالج تک پہنچتی ہے، جس کی وجہ سے اساتذہ کو 4 ماہ سے تنخواہیں نہیں دی گئی ہیں  اور اس کے ساتھ ساتھ کے ایم ڈی سی کے اساتذہ نے میئر کراچی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا یہ ادارہ بلدیہ عظمی کے زیر نگرانی چلتا ہے اس کرپشن کے ذمہ دار بھی میئر کراچی ہے۔4 ماہ سے تدریسی عمل بھی معطل ہے اساتذہ کو 4 ماہ سے تنخواہیں نہیں دی جارہی، جس کی وجہ سے اسانذہ نے کلاسسز لینا بند کر دیں ہیں۔طلباء کا مستقبل اس وقت داؤ پر لگ گیا ہے۔یہ تنخواہوں کا مسئلہ گزشتہ 8 ماہ سے جاری ہےلیکن بعد میں پیسے دے دیے جاتے تھے بد قسمتی کے ساتھ اس بار ایسا نہیں ہو رہا ہے،ہر سال کراچی میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالچ کی میٹنگ ہوتی ہے جس میں میئر کراچی اور اعلٰی شخصیات شریک ہوتیں ہیں ان کو بتایا جاتا ہے کالج کو یہ مسائل لاحق ہیں لیکن میئر کراچی اس مسئلے کو نہیں دیکھ رہے اور  میئر کراچی کالج انتظامیہ کو کہتے ہیں ، سندھ حکومت گرانٹ کے جتنے پیسے دیتی ہے اُتنے ہی کالج کو ارسال کر دیے جاتے ہیں،لیکن ایسا ہرگز نہیں ہو رہا اس وقت 4 کروڑ حکومت سندھ سے پاس کروا کر میئر کراچی 3 سے ڈھائی کروڑ روپے کالج کو دے رہے ہیں جس سے بمشکل صرف کالج کے اخراجات بھی پورے نہیں ہو پا رہے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us