پاکستان کو 647 ملین روپے کا مالی نقصان!

متعدد اسٹیک ہولڈرز نے انكشاف كيا ہے كہ جمعيت علماءاسلام (ف) كے جاری دھرنے كی وجہ سے سركاری اور نجی شعبہ كو اب تک لگ بھگ 647 ملين روپے سے زائد كا مالی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔ سيكٹرايچ نائن ميں جے يو آئی (ف) كا دھرنا 13ويں روز ميں ميں داخل ہو گيا ہے، يہ دھرنا وفاقی دارالحكومت ميں معاشی سرگرميوں كو بری طرح سے متاثر كر رہا ہے جس سے روزانہ تقريباً 45 ملين روپے كا نقصان ہو رہا ہے اوراس كی وجہ سے دوسرے شہروں كے رہائشيوں كے روزمرہ كے معاملات زندگی بری طرح متاثر ہو رہی ہے ۔ دھرنے كے باعث ميٹرو بس سروس كی معطلی، ہفتہ وار سستے بازار كی بندش، دھرنے كی شركاءكی حفاظت كيلئے تعينات قانون نافذ كرنے والے اداروں كے اہلكاروں كے اخراجات اوركرائے پر لئے گئے كنٹينروں كے بھاری بھركم بلوں كی وجہ سے ملكی معيشت پر برے اثرات مرتب ہو رہے ہيں ۔ اسی طرح دھرنے كے شركاءكو بنيادی سہوليات كی فراہمی جيسے پانی، سپلائے ٹيشن سيمت ديگر امور كيلئے روزانہ كي بنياد پر كثير رقم خرچ ہو رہی ہے۔ پی ايم اے كے سركاری ذرائع نے "اے پی پی” كو بتايا كہ دھرنے سے ايک روز قبل اسلام آباد كی ضلعی انتظاميہ نے سكيورٹی خدشات كے پيش نظر ميٹرو بس سروس كو بند كر ديا، جس كے باعث جڑواں شہروں كے مكينوں كو متبادل راستوں سے اپنی منزل مقصود پر پہنچنے ميں شديد دشواری كا سامنا كرنا پڑ رہا ہے۔ ذرائع نے بتايا كہ ميٹرو بس سروس سے روزانہ سفر كرنے والوں كي تعداد تقريباً ايک لاكھ 20 ہزارسے ايک لاكھ30 ہزار ہے جن سے روزانہ كی بنياد پر ساڑھے تين ملين روپے كا ريونيو حاصل ہوتا تھا جو اب بند ہے۔ اسلام آباد كي ضلعی انتظاميہ كے ذرائع كے مطابق كہ دھرنا كے دوران 22 ہزار 500 پوليس اہلكار اپنے فرائض سر انجام دے رہے ہيں جن ميں اسلام آباد پوليس، پنجاب پوليس، آزاد جموں اينڈ كشمير پوليس اور ملک كے ديگر قانون نافذ كرنے والے اداروں كے حكام شامل ہيں ۔ ذرائع كا كہنا ہے كہ ان پوليس حكام پر خوراک، رہائش اور سفری اخراجات پر 32 ملين روپے سے زائد خرچ كر رہے ہيں ۔ 683 كنٹينر، 20 كرينز اور 100 بڑی گاڑياں دھرنے ميں استعمال كی جا رہی ہيں جس سے تقريباً 50 لاكھ روپے روزانہ كا نقصان ہو رہا ہے۔ ايچ نائن بازار كے ذرائع نے بتايا كہ بازار ميں 2743 اسٹالز موجود ہيں اور ان سے تقريباً 50 ملين روپے كی آمدن ہوتی ہے تاہم دھرنے كی وجہ سے يہ اسٹالز بند ہيں ۔ انہوں نے بتايا كہ سی ڈی اے ايچ نائن بازار سے سالانہ 15 ملين روپے ريونيو اكٹھا كرتا ہے۔ اسلام آباد كي ضلعی انتظاميہ اور ميٹرو پوليٹن كارپوريشن اسلام آباد نے سينی ٹيشن، صحت اور پانی كی ضروريات پر 3 ملين روپے خرچ كر چكی ہے۔ دھرنے كي وجہ سے اسكول جانے والے بچوں كے والدين بچوں كي واپسی تک اذيت اور پريشانی ميں مبتلا رہتے ہيں ۔ اسلام آباد سے راولپنڈی كی طرف سفر كرتے ہيں ليكن دھرنے كي وجہ سے انہيں راولپنڈی پہنچنے ميں بھاری رقم خرچ كرنا پڑتی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us