’مرد مارچ اپنی موت آپ مر گیا‘

مرد مارچ جو عورتوں کو سبق سکھانے کے لیے ہونا تھا، اس کے غبارے سے ہوا نکل گئی۔ عورت مارچ کے بعض بینرز مردوں کو بہت برے لگے اس لیے انہوں نے اسی جگہ یعنی فریئر ہال کراچی میں مرد مارچ کی ٹھانی۔ لیکن یہ کیا!! کوئی آیا ہی نہیں۔ کھایا پیا کچھ نہیں گلاس توڑا بارہ آنے۔۔۔۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us