مردوں کے ساتھ کھلواڑ، قبرستان میں کالا دھندا جاری

کراچی میں قبریں کم پڑ گئیں۔ ایک طویل عرصے سے کراچی میں قبرستان بھر گئے ہیں اور ان میں مزید قبریں بنانے کی جگہ باقی نہیں۔ مگر اس ملک میں ہر چیز میں دو نمبری ہے۔ ایک قبرستان مافیا جو کہ کراچی میں قبرستانوں میں ایکٹو رہتا ہے، وہ یہاں قبریں نا ہونے کے باوجود لوگوں کے لئے قبروں کا بندوبست کر دیتا ہے۔ وہ گروپ لوگوں سے پیسے وصول کرتا ہے۔

پرانی قبروں کو مسمار کرکے اس پر نئی قبریں بنائی جا رہیں ہیں۔ کے ایم سی نے بعض قبرستانوں میں مزیدقبروں پر پابندی بھی عائد کررکھی ہے لیکن نئے قبرستان نہ ہونے کے باعث موجودہ قبروں کو مسمار کیا جا رہا ہے جس پر شہری احتجاج کر رہے ہیں۔
بلدیہ عظمیٰ کراچی کو اس سلسلے میں مسلسل شکایات مل رہی ہیں لیکن اس کے باوجود شہر میں نئے قبرستانوں کے لیے جگہیں مختص کی جارہی ہیں اور نہ ہی بھرجانے والے قبرستانوں میں مزید تدفین سے روکاجارہا ہے۔

یہ مافیا پہلے سے تدفین مردوں کی توہین کرکے بھاری رقم کے عوض لوگوں کو من پسند قبرستان میں قبریں تیار کرکے دیتے ہیں، مگر لوگ غور نہیں کرتے کہ یہ کس طرح ہو رہا ہے۔ شہر بھر میں قبریں مسمار کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ کچھ لوگوں نے کے ایم سی پر الزام عائد کیا ہے کہ کے ایم سی کا عملہ اس مافیا کے ساتھ ملا ہوا ہے۔ شہریوں نے گذارش کی ہے کہ حکومتِ سندھ اس کالے دھندے کے خلاف نوٹس لیں اور نئے قبرستان ٹعمیر کروائیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us