صفائی مہم،بیماری مہم میں تبدیل

کراچی میں صفائی مہم طلبہ کو بیمار کرنے لگی کچرا اسکولوں کے سامنے ڈمپ کیا جارہا ہے جس کی وجہ سے کراچی میں نت نئی بیماریاں پیدا ہو گئ ہیں کراچی کا کچرا اب اسکولوں کے باہر پھینکا جانے لگا ہے بلدیہ وسطی میں 4 درس گاہوں کے سامنے موجود پارک کو کچرےکا ڈمپنگ پوائنٹ بنانے کی وجہ سے درس گاہوں کے طلبہ مختلف بیماریوں کا شکار ہونے لگے ہیں بلدیہ وسطی کی جانب سے پارک میں یومیہ 2 ڈمپرز کاکچرا پھینکا جارہا ہے جس کے باعث پورے علاقے میں تعفن پھیل گیا ہے اس کی وجہ سے یومیہ 3 درجن کے قریب بچے بخار کھانسی اور مختلف بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں اسکولوں کے منتظمین کی جانب سے ڈینگی پھیلنے کا خدشہ بھی ظاہر کیا جارہا ہے سندھ حکومت کی صفائی مہم شہریوں کے لیے اذیت بنتی جارہی ہے ضلع وسطی کے ہزاروں طلبہ کا مستقبل داؤ پر لگ گیا ہے فیڈرل بی ایریا کے اطراف 4 بڑی درس گاہوں وائٹ ہاؤس گرامر اسکول ، کراچی اکیڈمی گورنمنٹ بوائز سیکنڈری گرامر اسکول ،بوانی اسکول، میمن فاؤنڈیشن ، کچرے کے باعث علاقے میں تعفن اٹھ رہا ہے دوسری جانب اساتذہ بچوں کو تدریسی عمل میں شدید مشکلات کا سامنا ہے جب کے ضلع وسطی کی انتظامیہ کی نااہلی کی وجہ سے والدین نے اسکول تبدیل کروانا شروع کردیے ہیں جس کی وجہ سے بچوں کی پڑھائی کا نقصان ہو رہا ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us