بجلی کے بل نے جان لے لی

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے شہر جلال پور پیر والا میں بجلی کا بل زیادہ آنے کی وجہ سے  38 سالہ خاتون نے خودکشی کر لی۔

تفصیلات کے مطابق خاتون کے شوہر ارشاد احمد نے سرکاری دفاتر کے بار بار چکر لگائے جس میں اس کا موقف تھا کہ انہیں غلط بل بھیج دیا گیا ہے اور حکام آ کر اس کا میٹر دوبارہ چیک کریں۔ متعدد بار چکر لگانے کے بعد بھی ارشاد احمد کی ایک بھی نہیں سنی گئی۔ جس کے بعد اس نے فیصلہ کیا کہ و ہ اپنی بیوی کو اس بات پرمنانے کی کوشش کرے گا کہ وہ اپنے زیورات بیچ دے تاکہ و ہ اس رقم سے بل جمع کروا سکیں۔

ارشاد نے اپنی بیوی کو منانے کی کوشش کی مگر وہ نہ مانی۔ جس کے بعد دونوں میں تلخی پیدا ہو گئی۔تلخی کی صورت میں خاتون سے پریشر برداشت نہ ہو سکا۔ جس کی وجہ سے اس نے خود کو پھانسی دے دی۔

پولیس کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق رشتہ داروں نے بتایا ہے کہ ارشاد احمد کا بل 2000 سے زیادہ کبھی نہیں آیا۔ اس دفعہ 29 ہزار کا بل موصول ہونے کی وجہ سے ارشاداحمد اور اس کی بیوی دونوں بہت پریشان تھے کیونکہ وہ بل جمع نہیں کروا سکتے تھے اور اسی وجہ سے دونوں میں تلخی پیدا ہو گئی اور ارشاداحمد کی بیوی نے خودکشی کرنے کا فیصلہ کر لیا۔  خودکشی کرنے والی خاتون کی عمر 38 سال تھی جو کہ 2 بچوں کی ماں تھی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

WhatsApp WhatsApp us