انسانیت میں جنسی تفریق کیوں؟

انسانیت کا کوئی مذہب اور کوئی جنس نہیں ہوتی مگر ہمارے معاشرے میں ایسا نہیں ہے تیسری جنس جنہیں ہمارے یہاں خواجہ سرا کا نام دیا جاتا ہے آئے دن بے دردی سے قتل کردیے جاتے ہیں۔ مانسہرہ میں ایبٹ آباد کے رہائشی خواجہ سرا فرحان عرف ہنی کو ناڑی نامی علاقے میں ہاتھ پاؤں باندھ کر بے دردی سے قتل کردیا گیا۔

رپوٹ کے مطابق خواجہ سرا فرحان عرف ہنی کرائے کے گھر میں رہتا تھا۔ مانسہرہ پولیس کے مطابق فرحان کو گھر میں گھس کر 5 گولیاں ماریں گئیں جس سے وہ موقع پر ہی جاں بحق ہوگیا جبکہ نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

خواجہ سرا ہنی کے بہیمانہ قتل پر خواجہ سرا برادری کی جانب سے احتجاج کی کال دی گئی ہے۔ اُن کا مطالبہ ہے کہ ہنی کے قاتلوں کو فوری گرفتار کیا جائے۔ جب تک قاتل گرفتار نہیں ہوں گے وہ احتجاج ختم نہیں کریں گے۔

خیبر پختونخوا میں اس سے پہلے بھی اس طرح کے واقعات ہوئے مگر ان کے حوالے سے انصاف کا حصول تو دور انکے حوالے سے کوئی بات بھی نہیں کی جاتی۔ رپوٹ کے مطابق 2015 سے اب تک صرف کے پی کے میں 64 خواجہ سرا کو قتل کیا جا چکا ہے۔ جبکہ متعدد خواجہ سرا فائرنگ کے واقعات میں زخمی بھی ہوئے ہیں۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

WhatsApp WhatsApp us