خیبرپختونخواہ کے بعد سندھ میں بھی آٹے کا بحران!

میر پور خاص صوبائی وزیر خوراک کے آبائی گاؤں میں آٹے کا بحران شدت اختیار کر گیا،صوبائی وزیرا خوراک کے 43 روپے کلو آٹے کے اعلانات کے باوجود آٹا60 روپے فی کلو سے زائد فروخت ہو رہا ہے۔غریب عوام کی چیخیں نکل گئی۔دوسری جانب شہر کی فلورملوں کے ساتھ بھی ناانصافی کی جارہی ہے۔ کیونکہ اس میں بہت سی فلورملز کے ساتھ جو آٹے کے نرخ مقرر کیے گئے تھے اس کے مطابق آٹا فروخت نہیں کر رہے تمام تر منافع ملز مالکان کے پاس جارہا ہے۔واضح رہے صوبائی وزیر خوراک ہری رام کشوری لعل نے میر پور خاص میں آٹے کی فی کلو قیمت 43 روپے مقرر کی تھی۔ اور یہ بھی کہا تھا آئندہ آٹا ان ہی نرخوں پر فراہم کیا جائے گا لیکن بدقسمتی کے ساتھ میر پور خاص کے آٹے کے تاجروں کی من مانیا عروج پر ہیں۔حکومت سندھ ان کے خلاف کوئی خاص ایکشن نہیں لے رہی جس کا فائدہ تاجر اُٹھا رہے ہیں اور عوام کو لوٹ رہے ہیں۔کچھ دکاندار شہریوں کے ساتھ بد تمیزی کے ساتھ پیش آرہے ہیں اور آٹا نہ دینے کا کہہ دیتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

WhatsApp WhatsApp us