اسلحہ کے زور پر لاش قبر سے محروم

پنگریو کے نواحی گاوں بچل احمدانی کے رہا ئشی 10 سالہ بچے سعید احمدانی کی لاش تدفین س   ے اسلحہ کے زور پر روکنے میں ملوث افراد کو انتظامی یقین دہانی کے باوجود گرفتار نہ کرنے کے خلاف متوفی بچے کے ورثا اور سیاسی و سماجی کارکنوں نے پریس کلب پنگریو کے سامنے تین گھنٹے تک دھرنا دے کر پنگریو جھڈو اور یو ٹنڈو باگو روڈ بلاک کردیے۔ جس کی وجہ سے روڈ کے دونوں اطراف گاڑیوں کی طویل قطاریں لگ گئیں۔ متوفی بچے کے ورثا نے انصاف نہ ملنے پر روڈ پر ہی تعزیت وصول کرنا شروع کردی۔

اس موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہو ئے یونین کونسل سمن سرکار کے چیئرمین رضا احمد کھوسو، حر جماعت لاڑ چوکی کے مکھ فقیر لال بخش احمدانی ، متوفی بچے کے والد اختر احمدانی، اور چچا اکرم احمدانی نے کہا کہ گزشتہ روز زنگیجو برادری کے مسلح افراد نے مصری شاہ قبرستان پر قبضہ کرکے متوفی بچے کی لاش اور جنازے کے شرکا پر اسلحہ تان لیا تھا۔ اور قبر مسمار کرکے لاش واپس لے جانے پر مجبور کردیا تھا۔ بچے کی لاش 20 کلومیٹر دور واقع قبرستان میں دفن کرنا پڑی تھی۔ موقع پر پہنچنے والے ڈی ایس پی ٹنڈو باگو نے یقین دلایا تھا کہ اس واقعہ میں ملوث ملزمان کے خلاف کارروا ئی کی جا ئے گی مگر چوبیس گھنٹے گزر جانے کے باوجود ایک بھی ملزم کو گرفتار نہیں کیا جاسکا۔

اطلاعات کے مطابق واقعہ میں ملوث افراد بطے کے ورثا کو دھمکیاں دے رہے ہیں۔

واضح رہے کہ مصری شاہ قبرستان سرکاری ملکیت ہے مگر اس پر زنگیجو برادری کا قبضہ ہے۔ اور یہ جب چاہتے ہیں میتوں کی تذلیل کرتے ہیں۔ پنگر پولیس اور بدین کی ضلعی انتظامیہ انکے خلاف کوئی کارروائی نہیں کرتے۔ جس کی وجہ سے میتیں بھی انکی دہشت گردی کا شکار ہورہی ہیں۔ مظاہرین نے مطالبہ کیا ہے کہ واقعہ میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کی جائے بصورت دیگر احتجاج کا دائرہ وسیع کردیا جائے گا۔ احتجاجی مظاہرین نے زبردست نعرے بازی بھی کی۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

WhatsApp WhatsApp us